55

دیکھتی آنکھوں اور سنتے کانوں کو طارق عزیز کا سلام کہنے والے لب آج خاموش ہوگئے

”ان لمحوں کی یادیں سنبھال کہ رکھنا”
ہم یاد تو آئیں گے لیکن لوٹ کہ نہیں

‎طارق عزیز ایک عہد کا نام تھا جو آج اختتام پزیر ہوا۔
وہ ناصرف ادیب، شاعر ،سابق رکن قومی اسمبلی تھےبلکہ انہوں نےکئی فلموں میں اپنی اداکاری کے جوہر بھی دکھائے�.
‎1936ء میں بھارتی شہر جالندھر میں آنکھ
‎کھولنے والے طارق عزیز قیام پاکستان کے بعد اپنے خاندان کے ہمراہ صوبہ پنجاب آگئے
‎فنی کیریئر کاآغازریڈیو پاکستان سے کیا۔
‎1964ء  میں پاکستان ٹیلی وژن کا قیام عمل میں آیا تو طارق عزیز پی ٹی وی کے سب سے پہلے مرد اناؤنسر بنے
‎آپ کے کہے ہوئے یہ تاریخی الفاظ
‎“ پاکستان ٹیلی وژن سروس کی جانب سے طارق عزیز آپ سے مخاطب ہے “
‎ اور ”دیکھتی آنکھوں اور سنتے کانوں کو طارق عزیز کا سلام “
انکے چاہنے والے ہمیشہ یاد رکھیں گے۔
‎انہیں اصل شہرت پی ٹی وی کے معروف تربیتی اور معلوماتی گیم شو نیلام گھر سے شہرت حاصل ہوئی، وہ اس پروگرام کی میزبانی تقریباً 40 سال تک کرتے رہے۔
آپکو اردو، پنجابی اور انگریزی پر بھی عبور حاصل تھا۔
‎حکومت پاکستان کی جانب سے طارق عزیز کی خدمات کے صلے میں انہیں 1992ء میں صدارتی تمغۃ حسنِ کارکردگی سے نوازا گیا

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں