Embed HTML not available.

سویڈن کے وزیرِ اعظم کی نئی ہدایات

سویڈن میں کرونا وبا کی تیزی سے بڑھتی ہوئی صورتِ حال کے پیشِ نظر وزیرِ اعظم اور ان کی کابینہ نے ایک ہنگامی پریس کانفرنس میں نئی ہدایات کا اعلان کیا۔ جس کے مطابق کسی ایک جگہ پر آٹھ سے زیادہ لوگ جمع نہیں ہو سکتے ہیں۔ چاہے وہ کوئی گھریلو تقریب ہو، ثقافتی تقریب یا کاروباری ملاقات ہو۔انکا کہنا تھا کہ آپ لوگ غیر ضروری باہر جانا بھی کم کر دیں جیسا کہ بازاروں میں، لائبریری میں، گھریلوں تقریبات میں۔
میں سمجھتا ہوں ،کہ بہت سارے لوگ اس صورتحال سے تنگ آچکے ہیں ، اور انہیں یہ افسوس ہوتا ہے کہ وہ اپنے پیاروں سے نہیں مل سکتے۔لیکن کرونا ہمارے جذبات کو دھیان میں نہیں رکھتا ہے۔اسی لیے یہ قدم اٹھانا ضروری تھا تاکہ اس وبا کے پھیلاؤ کو روکا جاسکے۔
ہم اس وقت آزمائش سے گزر رہے ہیں جو کہ اور بھی خطرناک ہوسکتا ہے اگر ہم نے اپنی ذمہ داریوں کو پسِ پشُ ڈال دیا
۔ہم ہر چیز پر قانون سازی نہیں کرسکتے ہیں۔ اس لیے ہر ایک کو اس بات پر غور کرنا چاہئے ہے کہ کیا وہ جو کر رہے ہیں اس سے وبا کے پھیلاؤ کا خطرہ بڑھ جاتا ہے؟۔ اگر جواب ہاں میں ہے تو آپ کواس چیز سے پرہیز کرنا چاہئے۔
وزیر داخلہ کا کہنا تھا کہ بہت سے لوگ ابھی بھی یہ ہی سمجھ رہے ہیں کہ اس وبا کا خطرہ ٹل چکا ہےلیکن حقیقت میں ہم وبائی مرض کے بیچ میں ہیں۔
اس نئے قانون کا اطلاق 24 نومبر سے ہوگا۔جوکہ ایک ماہ تک جاری رہے گا

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں