82

سویڈن نے کورونا وائرس کی وبا کے دوران کسی قسم کا لاک ڈاؤن نہیں کیا۔

سویڈن دنیا کا وہ واحد ملک ہے جس نے کورونا وائرس کی وبا کے دوران کسی قسم کا لاک ڈاؤن نہیں کیا۔ ملک بھر میں کاروباری مراکز اور دیگر سرگرمیاں احتیاطی تدابیر کے ساتھ جاری رہیں جس سے ملک کی معاشی سرگرمیاں بحال رہیں۔ اس کے باوجود کورونا وائرس کووڈ -19 کے منفی اثرات معیشت پراثر انداز ہورہے ہیں اور بہت سے بڑے کاروباری اور صنعتی اداروں سے ملازمین کی چھانٹی کا سلسلہ جاری ہے۔ سویڈن کے ایک بڑے بینک، ہاندلز بینک نے اپنی 180 شاخیں بند کردی ہیں جس سے ایک ہزار ملازمین بے روزگار ہوگئے ہیں۔ H&M فیشن اور کپڑوں کے حوالے سے سویڈن کا عالمی شہرت یافتہ ادارہ ہے جس کی دنیا بھر میں دکانیں ہیں۔ یہ ادارہ بھی 250 دکانیں بند کررہا ہے جس ہزاروں لوگوں کا روزگار ختم ہوجائے گا۔ والو و کار اور آٹو موبائل بنانے والا بنیادی طور پر سویڈش ادارہ ہے جو اپنے ملازمیں کی چھانٹی کررہا ہے اور سویڈن میں اس چھانٹی سے 1300 افراد کے روزگار چھن جائیں گے۔ دوسری جانب معاشی ماہرین اور سویڈش قومی ادارہ برائے معاشی تحقیق کے مطابق سویڈن کی معیشت کورونا وائرس سے اتنی زیادہ متاثر نہیں ہوئی، جیسی کہ توقع کہ جارہی تھی لیکن بے روزگاری میں اب بھی اضافہ ہورہا ہے اور اس سال کے آخر تک بے روزگاری کی شرح 9 فی صد تک پہنچنے کا خدشہ ہے۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں