Embed HTML not available.

سولنا کمیون میں زمین کی فروخت میں بے ضابطگی کا انکشاف

اطلاعات کے مطابق گذشتہ سالوں سے سولنا کمیون میں ایک زمین کا سودا کافی عرصے سے متنازع بنا ہوا ہے۔43500 سکوائر فٹ کی رہائشی زمین کافی عرصے سے مختلف کمپنوں کی مرکز نگاہ بنی ہوئی ہے 2015 میں ایک تعمیرتی ادارے نے اس جگہ کو خریدنے کا ارادا ظاہر کیا تھا کاغذی کاروائی کے دوران چند وجوہات کی بنا پر سودا پورا نہیں ہو سکا. لیکن ایک دفعہ پھر اس زمین کا سودا مرکزِ نگاہ بنا اور اس کی وجہ قیمت کا تعین ہے۔
سوشل ڈیموکریٹ سولنا کی اپوزیشن کونسلر سارہ کوکا سلام نے اردو قاصد سے گفتگو کرتے ہوئے کہا کے ہمارا مطالبہ یہ ہے کہ کاونٹی پرانی قیمت پر یہ سودا کس طرح کر سکتی ہے جوکہ موجودا قیمت کے حساب سے بے حد سستی ہے۔گذشتہ 5 سالوں میں زمین کی قیمت میں کئی گنا اضافہ ہوا ہے اگر آپ عام جگہوں کی قیمتوں کے نصاب سے تخمینہ لگائیں تو 20000 سکوئر فٹ کے حساب سے اس زمین کی قیمت 870 ملین کرونا بنے گی۔ تو اب کس طرح یہ زمین پرانی قیمت جو کہ 176 ملین کرونا ہےپر دی جارہی ہے۔ ہم چاہتے ہیں کہ کسی بھی فروخت سے پہلے اس زمین کی قیمت کا سہی تعین ہونا چاہیے ہے۔دائیں بازو کی جماعت بھی اسی حق میں ہے اور انکا خیال ہے کہ اس فروخت سے پہلے تمام جماعتوں سے اس سلسلے میں رائے ضرور لینی چاہیے ہے۔
اب دیکھنا یہ ہے کہ اونٹ کس کروٹ بیٹھتا ہے۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں