18

چلے تو چاند تک نہیں تو شام تک

چین کا ایک بے قابو راکٹ آئندہ آنے والے دنوں میں زمین کی فضا میں داخل ہونے والا ہے اور سائنسدانوں کو یہ معلوم نہیں ہے کہ یہ کہاں گرے گا۔
اگلے چند دنوں میں ایک بے قابو چینی راکٹ زمین کی سطح پر گرے گا۔یہ 18 ٹن وزنی ’لانگ مارچ فائیو بی‘ نامی چینی راکٹ جس کی لمبائی 98 فٹ، جبکہ چوڑائی 16 فٹ ہے اور جو کہ اپنے مدار سے 27 ہزار 60 کلومیٹر فی گھنٹہ کی رفتار سے زمین کی جانب بڑھ رہا ہے۔
امریکی سائنسدانوں کا کہنا ہے کہ یہ ایک ایسے زون کی جانب بڑھ رہا ہے جو خط استوا سے 41 ڈگری شمال اور جنوب کے درمیان ہے۔ شمال میں یہ علاقہ نیویارک، استنبول اور بیجنگ تک جاتا ہے اور جنوب میں سڈنی اور برازیل تک۔
امریکی وزیرِ دفاع لائڈ آسٹن کا کہنا ہے کہ پینٹاگون چین کے اس بے قابو راکٹ پر نظر رکھے ہوئے ہے لیکن انھیں امید ہے کہ یہ کسی ایسی جگہ گرے گا جہاں اس سے کسی کو نقصان نہیں ہو گا۔
انکا مزید کہنا تھا کہ اس وقت ہمیں یہ معلوم نہیں کہ راکٹ کب اور کہاں گرے گا ۔
امید ہے کہ یہ راکٹ 10-12مئی کو گرے گا، لیکن سائنسدانوں کو اس کے گرنے سے ایک گھنٹہ پہلے تک یہ معلوم نہیں ہو گا کہ یہ عین کس جگہ گرے گا۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں