مورخہ ۲۶ مارچ کو اخوت سویڈن کی ذیلی کمیٹیوں کی جانب سے مختلف تقاریب کا اہتمام کیا گیا جس کا مقصد اخوت کے پیغام کو اپنے اپنے حلقوں میں عام کرنا تھا۔
سویڈن کے دوسرے بڑے شہر گوتھن برگ کے مقامی ہال میں منعقد مینا بازار میں موجود اخوت گوتھن برگ کے اسٹال پر موجود صدر ڈاکٹر شاہد اور انکی ٹیم نے آنے والے تمام مہمانوں کو اخوت اور اس کے کام کرنے کے طریقہ کار کے بارے میں تفصیل فراہم کی اس تقریب کی خاص بات یہ تھی کہ اخوت سویڈن کے صدر ڈاکٹر عارف کسانہ خاص طور پر اس میں شرکت کے لئے اسٹاک ہولم سے تشریف لے گئے تھے ۔ اسٹال پر آنے والے مہمانوں نے اخوت کے کام کی نا صرف تعریف کی بلکہ اس بات کا بھی یقین دلایا کہ وہ بھی اس کام میں بڑھ چڑھ کر حصہ لیں گے۔

اسی سلسلے میں دوسری تقریب کا اہتمام اخوت اُپسالا کی جانب سے سویڈن کے شہر اُپسالا میں کیا گیا تھا۔تقریب کا آغاز عاقب حیات نے تلاوتِ قران سےکیااور نظامت کے فرائض ڈاکٹر شفقت احمد نے انجام دیئے ۔ اخوت سویڈن کے جنرل سیکرٹری ابرار اکبر صاحب نے اخوت اور اس کے کام کی تفصیل فراہم کی۔ اخوت سویڈن کی جوائنٹ سیکرٹری منزہ لوسر نے اخوت کے مختلف شعبوں اور ان کے کام کرنے کے طریقہ کار کی معلومات مہمانوں تک پہنچائی۔اخوت کے بانی و چیئرمین ڈاکٹر امجد ثاقب صاحب جو بذریعہ زوم تقریب میں موجود تھے نے اخوت کی شروعات اور بنانے کے مقاصد کی کہانی سناتے ہوئے اس خوشی کا اظہار بھی کیا کہ مواخات کا یہ پیغام پوری دنیا میں بڑی تیزی سے پھیل رہا ہے۔اور انہوں نے وہاں موجود مہمانوں کے سوالات کے بھی جواب دئیے۔
اخوت سویڈن کے صدر ڈاکٹر عارف کسانہ جو کہ بذریعہ زوم اپنی ٹیم کے ساتھ تقریب میں شامل تھے نے سب سے پہلے تو اپنی اور پوری ٹیم کی جانب سے ڈاکٹر امجد ثاقب صاحب کو حکومت پاکستان کی جانب فخرِ پاکستان کا لقب ملنے پر مبارک دی اور ساتھ ہی اخوت اُپسالا کے صدر ڈاکٹر محمد کاشف اور انکی ٹیم کو اپنے اس کامیاب تقریب کے انعقاد پر بھی مبارک باد دی۔
تقریب کے آخر میں اُپسالا کے صدر ڈاکٹر محمد کاشف نے تمام مہمانوں کا شکریہ ادا کرتے ہوئے اس امید کا بھی اظہار کیا کہ تقریب میں موجود مہمان اخوت کے اس پیغام کو دوسروں تک بھی پہنچائیں گے اور اخوت کے اس گل دستہ کے پھولوں کی خوشبو ہر خطے میں عام کریں گے۔