4

فلیش فکشن …. مجرم نہیں کافر!!!

ٹھائیں ٹھائیں ۔۔۔ بھگدڑ مچ گئی، لوگ ادھر اُدھر بھاگنے لگے۔

پہلی آواز: کیا ہوا؟ کیا ہوا ؟ یہ گولی کس نے چلائی ؟

دوسری گھبرائی ہوئی آواز: مار دیا ۔۔۔اُس نے گولی مار دی !

تیسری آواز: کس نے کس کو گولی مار دی ؟

چوتھی آواز: ٹھیک کیا اُس نے وہ کافر ہوگیا تھا اُس کو مار ہی دینا چاہیے تھا۔

پہلی آواز: ارے کون کافر ہوگیا تھا؟

دوسری آواز: ارے وہی والی ء شہر، اُس کے باڈی گارڈ نے ہی اُس کو اُڑا دیا۔

تیسری آواز: بہت اچھا کیا کمبخت کا یہی حشر ہونا چاہیے تھا۔ کافر کہیں کا !!

پہلی آواز: ارے کون ؟ کیا نام ہے اس والی ء شہر کا ؟

دوسری آواز: ارے کھنڈر پور کا والی…

تیسری آواز: ہاں ہاں ! اُس کا نام تھا حسن ابن ابو الحسن !

اجنبی آواز: بہت حیرانی سے اچھا! اب کافروں نے بھی ایسے نام رکھنے شروع کردیے ہیں ؟

ٹھائیں ٹھائیں ٹھائیں ۔۔۔

پہلی آواز: اب کیا ہوا؟ اب کے گولی کس نے چلائی ؟

دوسری آواز: ارے یہ تو کمبخت پولیس والا تھا۔

تیسری آواز: بیڑا غرق ہو ان کا! ۔۔۔ارے ! اسے ہی مار دیا جس نے اس کافر والی ء شہر کو مارا تھا۔

اجنبی آواز: ارے یہ پولیس والا بھی کہیں کافر تو نہیں؟

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں