دل تیری یاد سے روشن ہے، خیالوں سے دماغ
دھوپ ہی دھوپ ہے افکار کے ایوانوں میں
جمیل احسن